سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

سونے کا زیور خریدا اور بائع ہی سے قیمت ادھار لے کر ادا کر دی

  • 9368
  • تاریخ اشاعت : 2014-01-11
  • مشاہدات : 443

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

ایک انسان نے مجھ سے سونے کا زیور خریدا جس کی قیمت ایک ہزار ریال ہے۔ جب میں نے اسے بتایا کہ اس کی بیع نقد ہی جائز ہے تو اس نے کہا کہ آپ نے مجھے ایک ہزار ریال ادھار دے دیں تو میں نے اسے ایک ہزار ریال ادھار دے دئیے اور وہ اس نے مجھے سونے کی قیمت کے طور پر واپس کر دئیے تو کیا یہ جائز ہے؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

یہ جائز نہیں کیونکہ یہ تو سود کے لیے حیلہ ہے اور پھر اس میں دو عقد سلف اور عقد بیع بھی جمع ہیں اور یہ بھی ممنوع ہے۔

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

محدث فتوی

فتوی کمیٹی

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ