سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(64) غیر مسلموں کے فوت شدہ بچوں کے بارے میں حکم

  • 924
  • تاریخ اشاعت : 2012-06-02
  • مشاہدات : 1339

سوال

 

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

کیا غیر مسلموں کے بچے جنتی ہیں ؟ ازراہ کرم کتاب وسنت کی روشنی میں جواب عنایت فرمائیں۔جزاکم اللہ خیرا


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

 

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

غیر مسلموں کے بچوں کے بارے میں سلف صالحین کے ہاں خاصا اختلاف ہے۔ صحیح قول کے مطابق غیر مسلموں کے بچے جنتی ہیں۔ اللہ تعالیٰ کا ارشاد ہے:

﴿ وَمَا كُنَّا مُعَذِّبِينَ حَتَّى نَبْعَثَ رَسُولاً﴾ (الإسراء:15)

’’اور ہماری سنت نہیں کہ رسول بھیجنے سے پہلے ہی عذاب کرنے لگیں۔‘‘

جب اللہ تعالیٰ کسی بالغ شخص کو دعوت پہنچنے سے پہلے عذاب نہیں دیتے تو بچے کو کس طرح عذاب دے سکتے ہیں۔

اس کی تائید اس حدیث سے بھی ہوتی ہے جس میں آپﷺ نے فرمایا:

’’ كل مولود يولد على الفطرة ‘‘  (متفق علیہ)

’’ہر پیدا ہونے والا فطرت پر پیدا ہوتا ہے۔‘‘

مسند احمد میں ہے کہ نبی کریمﷺ نے ارشاد فرمایا:

’’ النبي في الجنة والشهيد في الجنة والمولود في الجنة ‘‘  (مسند احمد :21125)

’’نبی، شہید اور مولود جنتی ہیں۔‘‘

لہٰذا اگر غیر مسلموں کے بچے بلوغت سے پہلے فوت ہوجائیں تو وہ جنتی ہیں۔

وبالله التوفيق

قرآن وحدیث کی روشنی میں احکام ومسائل

جلد 02

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ