سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(295) اہل کتاب ملکوں سے درآمد شدہ گوشت

  • 15540
  • تاریخ اشاعت : 2016-04-17
  • مشاہدات : 708

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته
میرا یہ سوال اس گوشت اورفریزکی ہوئی مرغی کے بارے میں ہے جسے بیرونی ممالک سے درآمد کیا جاتا ہے اورجس کے بارے میں ہمیں یہ معلوم نہیں ہوتا کہ اسے کس طرح ذبح کیا گیا ہے بعض علماء فرماتے ہیں کہ اس قسم کا گوشت نہیں خریدنا چاہئے؟

الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

اگرمذکورہ گوشت اہل کتاب کے ملکوں سے درآمد کیاگیا ہو تواسےکھانا حلال ہے بشرطیکہ تمہیں کوئی ایسی بات معلوم نہ ہو جو اس کی حرمت پر دلالت کرتی ہو کیونکہ ارشادباری تعالی ہے:

﴿اليَومَ أُحِلَّ لَكُمُ الطَّيِّبـٰتُ وَطَعامُ الَّذينَ أوتُوا الكِتـٰبَ حِلٌّ لَكُم وَطَعامُكُم...﴿٥﴾... سورة المائدة

‘‘آج تمہارےلئےسب پاکیزہ چیزیں حلال کردی گئیں ہیں اوراہل کتاب کاکھانابھی تمہارےلئےحلال ہےاورتمہاراکھاناان کےلئےحلال ہے۔’’

اہل کتاب کے بعض ملکوں کے بعض مذبح خانوں  میں جانوروں کو جو غیر شرعی طریقے سے ذبح کیا جاتا ہے تواس سے یہ لازم نہیں آتا ہے کہ اہل کتاب کے ملکوں سے درآمد کئے جانے والے تمام ذبیحے حرام ہیں حتی کہ کسی معین ذبیحہ کے بارے میں یقینی طورپر یہ معلوم نہ ہو جائے کہ اسے ایسے مذبح خانے سے منگوایا جاتا ہے جس میں جانوروں کوغیر شرعی طریقے سے ذبح کیا جاتا ہے کیونکہ اصل حلت وسلامتی ہے الا یہ  کہ کوئی ایسی بات معلوم ہو جو اس کی حرمت کی متقضی ہو!
ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

مقالات و فتاویٰ

ص415

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ