سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(142)نفلی روزے

  • 14928
  • تاریخ اشاعت : 2016-03-30
  • مشاہدات : 600

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

ماہ شعبان کے درمیان میں جوروزے رکھے جاتے   ہیں اورجن پرکچھ اہلحدیث بھائی بھی عامل ہیں  یہ احادیث میں سےثابت ہیں یا نہیں؟ان کا حکم کیا ہے؟یہ سنت ہیں یابدعت؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

صحیح احادیث سےجومعلوم ہوتاہے۔(جتنامجھےعلم ہے)وہ یہ

ہےکہ اس ماہ شعبان میں رسول اکرمﷺدوسرے مہینوں کی  نسبت زیادہ روزےرکھتے تھے۔

باقی خاص بیچ کے بارے میں مجھے ابھی تک کوئی صحیح حدیث معلوم ہونہ سکی ہے اس لیے اس مہینے میں جوروزہ رکھے گا۔(شروع بیچ،یاآخرکوخاص نہ کرکے)تووہ سنت کامتبع ہےاوراس کواس کااجروثواب بھی ملےگا۔ماہ شعبان میں زیادہ روزے رکھنے کے بارے میں صحاح ستہ میں احادیث موجودہیں۔
ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ راشدیہ

صفحہ نمبر 516

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ